کوئٹہ: بلوچستان میں پانچ روز کے دوران کوئلہ کانوں میں آٹھ کان کن ہلاک


 منگل ۱۲ ۲۰۱۷    ایک ھفتہ پہلے     ۲۳     کوئٹہ‎   پرنٹ نکالیں
(فائل فوٹو)

رپورٹ    ویب ڈیسک   :کوئٹہ: بلوچستان کے علاقے دکی میں کوئلے کی کان میں زہریلی گیس کے باعث ایک اور کان کن ہلاک اور ایک زخمی ہو گیا۔بلوچستان میں پانچ روز کے دوران کوئلہ کانوں میں پیش آنے والا یہ تیسراواقعہ تھا جن میں اب تک آٹھ کان کن ہلاک ہو چکے ہیں۔دکی میں پولیس کے اہلکار نے بتایا کہ اخترزئی کے علاقے میں کوئلے کی ایک کان میں زہریلی گیس بھر گئی۔ گیس کے باعث کان میں کام کرنے والے دو کان کنوں میں سے ایک ہلاک اور دوسرا بے ہوش ہوگیا۔پولیس اہلکار کے مطابق دونوں کان کنوں کا تعلق افغانستان سے ہے۔گزشتہ روز ہرنائی کے علاقے ہزارہ ڈمب میں ایک کان میں زہریلی گیس کے باعث تین کان کن ہلاک ہوئے تھے ۔اس سے قبل 8ستمبر کو کوئٹہ کے قریب سورینج کے علاقے میں بھی ایک کان میں زہریلی گیس کی وجہ سے چار کان کن ہلاک اور دو بے ہوش ہوگئے تھے۔ کول مائنز لیبر فیڈریشن بلوچستان کے صدر بخت نواب کا کہنا ہے کہ کانوں میں تحفظ کے لیے مناسب انتظامات نہ ہونے کی وجہ سے ان میں آئے روز حادثات پیش آرہے ہیں ۔ان کا کہنا تھا کہ کانوں کے اندر ہوا کا مناسب انتظام نہیں کیا جاتا جس کے باعث کان کن کان کے اندر دم گھٹ کر ہلاک ہوتے ہیں