یونس آئرس: اسرائیل نے ایران کے متنازعہ جوہری پروگرام کو ختم یا اس میں ترامیم کا مطالبہ کردیا


 بدھ ۱۳ ۲۰۱۷    ایک ھفتہ پہلے     ۲۰     واشنگٽن   پرنٹ نکالیں
(فائل فوٹو)

رپورٹ    ویب ڈیسک   :یونس آئرس: اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو نے کہا ہے کہ ایران کے متنازعہ جوہری پروگرام کی روک تھام کے لیے عالمی طاقتوں اور تہران کے مابین طے پانے والی ڈیل کو یا تو ختم کر دیا جانا چاہیے یا اس میں ترامیم لازم ہیں۔ٹائمز آف اسرائیل کی رپورٹ کے مطابق انہوں نے یہ بیان جنوبی امریکی ملک ارجنٹائن کے صدر ماروسیو ماکری کے ساتھ ایک ملاقات کے بعد دیا۔ نیتن یاہو اپنے اس دورے کے دوران متعدد مرتبہ ایران پر تنقید کر چکے ہیں۔ وہ الزام عائد کرتے ہیں کہ تہران حکومت عالمی سطح پر دہشت گردی کی پشت پناہی کرتی ہے۔ان کا کہناتھا کہ ایران کے ساتھ جوہری ڈیل ایک بری ڈیل ہے۔ہما را موقف یہ ہے کہ اس یا تو ختم کر دیا جائے یا تبدیل کیا جائے۔ بینجمن نیتن یاہو کسی لاطینی امریکی ملک کا دورہ کرنے والے پہلے برسر اقتدار اسرائیلی وزیر اعظم ہیں۔واضح رہے رواں ماہ کے آخر میں اسرائیلی وزیر اعظم کی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ نیو یارک میں ملاقات طے ہے۔اس ملاقات کے حوالے سے میڈیا رپورٹس کہتی ہیں کہ ڈونلڈ ٹرمپ ایران کو 2015کی جوہری ڈیل سے نکال دیں گے۔