کراچی: حادثے کے ملزم کو پلے کارڈ اٹھا کر کھڑے ہونے کی سزا


 جمعرات ۱۲ آکتوبر‬‮ ۲۰۱۷    ۲ ھفتے پہلے     ۱۸     کراچی   پرنٹ نکالیں
فائل فوٹو

رپورٹ    ویب ڈیسک   :کراچی: مقامی عدالت نے حادثے کے ذمہ دار ملزم کو پلے کارڈ اٹھا کر کھڑے ہونے کی انوکھی سزا سنادی ہے۔ ملزم ایک سال تک جمعے کے روز قائد اعظم ہاؤس کے باہر پلے کارڈ لے کر کھڑا ہوگا۔ جودیشل مجسٹریٹ ایسٹ شعیب الہٰی نے فیصلہ سنایا کہ ملزم قاسم ایک سال تک جمعے کے روز قائد اعظم ہاؤس کے باہر پلے کارڈ لے کر کھڑا ہوگا جس پر درج ہو گا کہ احتیاط کیجئے، غفلت اور لاپرواہی سے گاڑی چلانا جان لیوا ہے۔ عدالت نے قاسم کو ۵۰ ہزار روپے جرمانے کی سزا بھی سنائی ہے۔ عدالت نے متعلقہ ٹریفک سیکشن آفیسر کو بھی ہدایت کی ہے کہ اس کو مانیٹر کیا جائے اور رپورٹ عدالت میں جمع کرائی جائے۔ ملزمان پر الزام ہے کہ ۲۰۰۵ میں قاسم اور اسلام نے شاہراہ فیصل پر موٹر سائیکل سے اس وقت کے صدر جنرل مشرف کے پروٹوکول میں موجود پولیس اہلکار کو ٹکر مار دی تھی جس کے نتیجے میں زبیر نامی پولیس اہلکار زخمی ہوا تھا۔ عدالت نے قاسم کو سزا کا حکم دیا، جبکہ محمد اسلام کو بری کردیا ہے۔ ملزمان کے خلاف تھانہ فیروز آباد میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔