پائلٹ نے حاضر دماغی سے ۵۶ لوگوں کی زندگیاں بچالیں


 پير ۱۳ نومبر ۲۰۱۷    ۵ دن پہلے     ۳۳     لندن   پرنٹ نکالیں
فائل فوٹو

رپورٹ    ویب ڈیسک   :لندن: آئرلینڈ میں پائلٹ نے طیارے کی ہنگامی لینڈنگ کے دوران حاضر دماغی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ۵۲ مسافروں کی زندگیاں بچالیں۔ تفصیلات کے مطابق آئرلینڈ کے بیلفاسٹ ایئرپورٹ سے اڑان بھرنے والی یورپی نجی ہوائی کمپنی فلائی بی کی پرواز بی ای ۳۳۱ میں ٹیک آف کے فوری بعد اچانک خرابی پیدا ہوگئی، جس کی وجہ سے طیارہ زیادہ اونچائی پر نہیں جاپا رہا تھا۔ کنٹرول ٹاور کی جانب سے جہاز کا وزن کم کرنے کی ہدایات پر پائلٹ 2 گھنٹے تک شہر کے گرد طیارے کے چکر لگاتا رہا تاکہ ایندھن جلنے سے اس کا وزن کم ہوسکے۔ طیارے کی ہنگامی لینڈنگ اور مسافروں کی جانیں بچانے کے لیے رن وے کو دیگر پروازوں کیلئے بند کردیا گیا، وزن میں مناسب کمی کے بعد پائلٹ نے جہاز کو ایئرپورٹ پر لینڈ کرانے کی بھرپور کوشش کی لیکن اس کے باوجود جہاز کا اگلا حصہ رن وے کی زمین سے رگڑ کھا گیا تاہم پائلٹ کی مہارت سے جہاز میں موجود ۵۲ مسافروں اور عملے کے ۴ افراد کی زندگیاں محفوظ رہیں۔ ایئرپورٹ عملے کے مطابق تمام مسافروں بشمول ایک بچے کی حالت خطرے سے باہرہے، صرف ایک مسافر کو علاج کے لیے اسپتال لے جایاگیا جسے جہاز کے جھٹکوں کی وجہ سے ہاتھ پر معمولی چوٹ آئی۔ دوسری جانب نجی ایئرلائن کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ہماری بنیادی تشویش مسافروں کی مدد اور ان کا تحفظ ہے، ایک کے سوا کسی مسافر کے زخمی ہونے کی کوئی اطلاع نہیں، ایک ماہر ٹیم کو حادثے کی تحقیقات کیلئے بھیجا جائے گا تاکہ تکنیکی خرابی کی وجوہات کا تعین کیا جاسکے۔