جام شورو میں دہمکیاں ملنے پر نوجوان کا احتجاج، نوٹیس لینے کا مطالبہ


 منگل ۱۸ اپريل ۲۰۱۷    ۲ ماہ پہلے     ۴۱۰     جامشورو   پرنٹ نکالیں

رپورٹ    علی مراد چانڈیو   :جام شورو: سندھ یونیورسٹی ہاؤسنگ سوسائٹی جامشورو کے رہائشی ممتاز علی نوحانی نے پریس کلب جامشوروپہنچ کر صحافیوں کے سامنے سخت احتجاج کرتے ہوئے کہاکہ بوبک شہر سے آکر آباد ہونیوالا فاروق قریشی جو اپنے آپکو ڈاکٹر بتاتا ہے ، وہ اور اسکا بیٹا حمزہ علی قریشی بلاجواز آئے دن پہلے مجھ سے لڑتے تھے ۔جس پر میں نے انکے اس عمل کے خلاف کورٹ میں پٹیشن داخل کرائی تھی۔ جسکی وجہ سے وہ لوگ طیش میں آکر اب مجھے آتے جاتے ہراساں کرتے اور دہمکیاں دے رہے ہیں ۔جبکہ2دفعہ انہوں نے مجھے مارنے کے لئے اسلحہ بھی تانا ہے ۔ ممتاز علی نوحانی نے متعلقہ اعلیٰ حکام سے اپنے اور اپنے اہلِ خانہ کے تحفظ انصاف اور اُن باپ بیٹا کے خلاف سخت قانونی کاروائی کا مطالبہ کیا ہے .