بدین: اساتذہ کا مردم شماری فوکل پرسن کے روئے کے خلاف احتجاجی دہرنا


 جمع ۲۱ اپريل ۲۰۱۷    ۲ ماہ پہلے     ۵۸     بدين   پرنٹ نکالیں
بدین

رپورٹ    تنویر احمد آرائیں   :بدین:مردم شماری کی تربیت حاصل کرنے والے اساتذہ کو ڈی سی آفیس طلب کیا گیا جہاں پر اساتذہ کو مردم شماری کی حتمی پروگرام سے آگاہی کے علاوہ تربیت حاصل کرنے والے اساتذہ کو معاوضہ دیا جانا تھا اساتذہ جب دربار ہال پہنچے تو ہال کو تالا لگا ہوا تھا احتجاج پر تالا کھولا گیا پر نہ ہی اساتذہ کو کرسیاں مہیا کی گئی اور نہ ہی ہال کی بجلی بحال کی گئی مردم شماری کے فوکل پرسن اے سی بدین نوید لاڑک اور مردم شماری افسر نے اجلاس میں آنے کی بجائے پیغام دیا کے آپ ہمارے مہمان نہیں کے آپ کی مہمان نوازی کی جائے اور آپ لوگ مفت میں ڈیوٹیاں نہیں کر رہے اور اس کے علاوہ تحصیل بدین کے اساتذہ کو معاوضہ کی رقم دینے سے بھی جواب دیا گیا افسران کے روئے کے خلاف سیکڑوں اساتذہ نے اساتذہ رہنماؤں حیات نظامانی ،کاشف میمن، نجم جمالی ، غلام حسین سومرو اور غلام رسول ملاح کی قیادت میں اجلاس کا بائیکاٹ کرتے ہوئے ڈی سی آفیس کے سامنے دھرنہ دے کر احتجاج کیا اور افسران کے خلاف شدید نعرے بازی کی