کشمیریوں پر ظلم وتشدد اور املاک کی توڑ پھوڑ بھارتی جمہوریت پر بدنما داغ ہے ،یاسین ملک


 پير ۱۹ جون ۲۰۱۷    ۴ ماہ پہلے     ۴٦     سری نگر   پرنٹ نکالیں
(فائل فوٹو)

رپورٹ    ویب ڈیسک   :سرینگر: مقبوضہ کشمیرمیں جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک نے کہا ہے کہ ترکہ وانگم شوپیان میں بھارتی فوجیوں کی طرف سے نہتے کشمیریوں پر ظلم و تشدد اور گھروں میں گھس کر مکینوں پر یلغار اور توڑ پھوڑ بھارتی جمہوریت پر ایک بدنما داغ ہے۔ یاسین ملک نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہاکہ بھارتی فورسز کی اس کارروائی نے جارحیت اور سرکاری ظلم و جبر کا پول کھول دیا ہے۔انہوں نے کہاکہ شوپیان میں بھارتی فوج کے عوام پر حملے جس کے نتیجے میں بچوں،بوڑھوں اور عورتوں سمیت بیسویں افراد زخمی اور مکانوں اورگاڑیوں کا کروڑوں روپے کا نقصان ہوا ہے ، وہ قابل مذمت ہے۔انہوں نے افسوس ظاہر کیاکہ ترکہ وانگم میں 3روز کے اندر دوسری باربھارتی فورسز نے نہتے کشمیریوں کوظلم و تشددکا نشانہ بنایا ہے اور کٹھ پتلی انتظامیہ کی اس صریح ظلم و جبر پر مجر مانہ خاموشی دراصل اْن کی رضامندی کو ظاہر کرتی ہے۔ یاسین ملک نے اسے کٹھ پتلی انتظامیہ کی خاموش حمایت سے جاری عوام کشُ پالیسی قرار دیا۔ انہوں نے کہاکہ ماہ صیام کے مقدس ایام میں دوران شب بھارتی فورسز کے حملوں نے ایک بارپھر واضح کردیا ہے کہ جموں وکشمیر میں اگر کوئی ظالم ہے تو وہ بھارتی فورسز ہی ہیں جن کا کام لوگوں کاقتل عام ، اْن پر حملے کرنا، انہیں زخمی کرنا،اْن کی بینائی چھین لینا اوراْن کے املاک اور دیگر سامان کو تہس نہس کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی فورسز نہ توعورتوں کا خیال کرتے ہیں اور نہ ہی بچوں یا بزرگوں کا انہیں کچھ پاس و لحاظ ہے کیو نکہ وہ کشمیریوں کا اپنا دشمن سمجھتے ہیں۔یاسین ملک نے خبردار کیاکہ کشمیری عوام اس قہر و جبر کو کسی بھی حال میں برداشت نہیں کریں گے اور اگر بھارتی حکمرانوں نے اپنے بے لگام فورسزکو لگام نہ دی تو اس کے خلاف بھر پور اور منظم احتجاجی مہم چلائی جائیگی جس کی تمام تر ذمہ داری انتظامیہ پر عائد وہ گی ۔انہوں نے کہا کہ بے رحم بھارتی فوجیوں اور اْن کے سرپرستوں کو یہ بات یاد رکھنی چاہیے کہ کشمیری اْن کے اس ظلم و جبر سے کسی بھی صورت میں مر عوب نہیں ہوں گے اور اس کا بھر پور مقابلہ کرتے رہیں گے۔