منگل ۱۶ آکتوبر‬‮ ۲۰۱۸ -

تخلیقی صلاحیتوں کے حامل افراد ذہنی امراض میں مبتلا ہوتے ہیں، تحقیق

ویب ڈیسک | ۵ ماہ پہلے

58

No-Image

لندن:(16 مئی 2018) دنیا کو مختلف زاویئے سے دیکھنے والے شاعر، مصور اور نت نئے تخلیقی شاہکاروں کے موجد اکثر دماغی مرض ’’شیزوفرینیا‘‘ میں مبتلا ہوجاتے ہیں۔

کسی اچھوتے خیال کو شعر کی رعنائی دینے والے، کسی رنگین منظر کو کینواس پر بکھیرنے والے یا کسی بول کو مدھر سُروں میں ڈھالنے والے تخلیق کار کسی بھی معاشرے کا حساس ذہن ہوتے ہیں۔

سائنسی جریدے برٹش جرنل آف سائیکیٹری میں شائع ہونے والے ایک سائنسی مطالعے نے ایسے ذہین و فطین اور سماج کےلیے قابل فخر قرار دیئے جانے والے افراد کے دماغی مرض میں شیزوفروینیا میں مبتلا ہونے کے قوی امکانات کا انکشاف کیا ہے۔

اس کی بنیادی وجہ تخلیق کاروں کا حساس ہونا اور گھنٹوں سوچ بچار کے علاوہ سماج کے رویّے پر کُڑھتے رہنا ہے۔کنگز کالج آف لندن میں جیمس مک کیبے اور ان کے ساتھیوں نے تخلیق کاروں کی ذہنی صحت کا مطالعہ کیا۔

یہ تحقیق سویڈن میں کی گئی جہاں پانچ ہزار سے زائد تخلیق کاروں کی جسمانی اور ذہنی صحت سے متعلق ٹیسٹ کرائے گئے۔

تخلیق کاروں کی تحلیل نفسی (سائیکو اینالیسس)، خاندانی ذرائع سے برتاؤ کا احوال اور ماہرین نفسیات سے انٹرویو سے حاصل ہونے والے اعداد و شمار سے پتا چلا کہ 90 فیصد تخلیق کاروں میں شیزوفرینیا میں مبتلا ہونے کے قوی امکانات پائے جاتے ہیں۔ 

Web Portal Developed and Designed by MIT SOFTWARE SOLUTION Hyderabad : http://mitsoftsolution.net, Contact us : (022) 3411371