جمعرات ۲۲ آگست ۲۰۱۹ -

سابق رکن سندھ اسمبلی بشیر سریوال عدالت عالیہ سے ضمانت مسترد ہونے پر گرفتار

ویب ڈیسک | ۲ ماہ پہلے

37

No-Image

 حیدرآباد:( رپورٹ محمد حماد)  سندھ ہائی کورٹ سرکٹ بینچ حیدرآباد سے ضمانت مسترد ہونے پر پیپلزپارٹی کے ضلع بدین سے منتخب ہونے والے سابق رکن سندھ اسمبلی بشیر سریوال کو گرفتار کرلیا گیا۔

بشیر سریوال نے ہائی کورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان کیا ہے۔سندھ ہائی کورٹ سرکٹ بینچ حیدرآباد میں سابق رکن سندھ اسمبلی بشیر سریوال کی درخواست ضمانت کی سماعت ہوئی، درخواست کی سماعت جسٹس ندیم اختر اور جسٹس عبدالرشید پر مشتمل ڈویژنل بینچ نے کی۔

عدالت نے سماعت کے بعد بشیر سریوال کی درخواست ضمانت مسترد کردی، پولیس نے بشیر سریوال کو احاطہ عدالت سے گرفتار کرکے سینٹرل جیل منتقل کردیا، اس موقع پر بشیر سریوال نے سندھ ہائی کورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان کیا۔

واضح رہے کہ بشیر سریوال 2008ء میں ضلع بدین کی نشست پی ایس 56 سے رکن سندھ اسمبلی منتخب ہوئے تھے، اُن کی بی اے کی ڈگری جعلی ثابت ہونے پر اُنہیں الیکشن کمیشن نے 2011ء میں نااہل قرار دے کر ان کے خلاف کرمنل کارروائی کی سفارش کی تھی۔

بشیر سریوال کو سیشن جج بدین نے جعلی ڈگری رکھنے کے جرم میں دو سال قید اور پانچ ہزار روپے جرمانے کی سزا سنائی تھی، بشیر سریوال کو پہلے سندھ ہائی کورٹ نے ضمانت پر رہا کردیا تھا۔ 

تاہم بعد ازاں اُن کی ضمانت مسترد کردی گئی تھی، بشیر سریوال نے دوبارہ سندھ ہائی کورٹ سرکٹ بینچ حیدرآباد سے ضمانت کے لئے رجوع کیا تھا، آج درخواست ضمانت مسترد ہونے پر اُنہیں گرفتار کرلیا گیا۔04 

Web Portal Developed and Designed by MIT SOFTWARE SOLUTION Hyderabad : http://mitsoftsolution.net, Contact us : (022) 3411371