منگل ۰۲ جون ۲۰۲۰ -

اپنی بے گناہی ثابت کرنے تک استعفے پر قائم رہوں گا: سمیع اللہ چودھری

ویب ڈیسک | ۲ ماہ پہلے

56

No-Image

لاہور:­(منگل:2020-04-07) پنجاب کے مستعفی وزیر خوراک سمیع اللہ چودھری نے کہا ہے کہ اپنی بے گناہی ثابت کرنے تک استعفے پر قائم رہوں گا۔

انہوں نے واضح کیا کہ میں نے کسی دباؤ میں وزارت سے استعفیٰ نہیں دیا ہے۔

میڈیا کے مطابق مستعفی صوبائی وزیر خوراک سمیع اللہ چودھری نے اعلان کیا کہ اپنی بے گناہی ثابت کرنے کے لیے ہر فورم پہ جاؤں گا۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے ملاقاتیں بھی کروں گا۔

سمیع اللہ چودھری نے کہا کہ میں نے استعفیٰ دینے کا فیصلہ اپنے دل و دماغ سے کیا ہے اور جب تک خود کو بے گناہ ثابت نہ کرلوں اس وقت تک دیے گئے استعفے پر قائم رہوں گا۔

میڈیا کے مطابق انہوں نے کہا کہ مجھ پر اصلاحات نہ لانے کا الزام لگایا گیا ہے لیکن یہ بھی تو دیکھیں کہ سوا سال میں چار سیکریٹری خوراک تبدیل ہوئے ہیں۔

مستعفی صوبائی وزیر خوراک کا کہنا تھا کہ کچھ اصلاحات لا چکا ہوں اور باقی اصلاحات کا مسودہ کابینہ کمیٹی میں بھی پیش کرچکا ہوں۔

سمیع اللہ چودھری نے کہا کہ میرا دامن صاف ہے اور اپنے حلقے کے عوام کے اعتماد کو کبھی بھی ٹھیس نہیں پہنچاؤں گا۔

پنجاب کے مستعفی وزیر خوراک سمیع اللہ چودھری نے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے ملاقات کے بعد گزشتہ روز وزارت سے استعفیٰ دیا تھا۔

فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے) کی انکوائری رپورٹ میں سمیع اللہ چودھری کو گندم بحران کا ذمہ دار قرار دیا گیا تھا۔

ان پر رپورٹ میں الزام عائد کیا گیا ہے کہ وہ اصلاحاتی ایجنڈا تشکیل نہیں دے سکے۔

رپورٹ میں ان پر پنجاب فوڈ ڈیپارٹمنٹ میں موجود خامیوں کو دور نہ کر سکنے کی ذمہ داری بھی عائد کی گئی ہے۔

سمیع اللہ چودھری نے اپنے استعفے میں تحریر کیا تھا کہ عمران خان کے ایجنڈے کی تکمیل کے لیے اپنی ہزار وزارتیں قربان کرنے کو تیار ہوں۔

ان کا مؤقف تھا کہ مجھ پر محکمہ خوراک میں اصلاحات نہ کرنے کے بے بنیاد الزامات عائد کیے گئے ہیں۔

تحریر کردہ استعفے میں سمیع اللہ چودھری نے لکھا تھا کہ میں اپنی وزارت سے رضاکارانہ طور پر مستعفی ہوتا ہوں۔

Web Portal Developed and Designed by MIT SOFTWARE SOLUTION Hyderabad : http://mitsoftsolution.net, Contact us : (022) 3411371