پنجاب حکومت نے اسپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الہی کو ہٹانے کا اصولی فیصلہ کر لیا

news-details

لاہور(آن لائین انڈس، 14 جون، 2022عہ) پنجاب حکومت نے اسپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الہی کو ہٹانے کا اصولی فیصلہ کر لیا، صوبائی وزراء کا کہنا ہے کہ 17 جولائی 2022عہ کو ہونے والے ضمنی الیکشن میں ن لیگ کے امیدواروں کو کامیاب کرواکر اسپیکرپنجاب اسمبلی پرویز الہی کو گھرروانہ کریں گے۔

ذرائع کے مطابق لاہو کے ماڈل ٹاؤن میں ن لیگ سیکرٹریٹ میں وزیراعلی پنجاب حمزہ شہباز شریف کی زیرصدارت پارٹی کا مشاورتی اجلاس ہوا، جس میں آج بجٹ پیش کرنے کے حوالےسے گفتگو ہوئی جبکہ اپوزیشن کی جانب سے بجٹ روکنے کے امکان پر قانونی ماہرین سے بھی مشاورت کی گئی۔

ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ آئی جی پنجاب اور چیف سیکرٹری کو آج بھی اسمبلی پیش نہیں کیا جائے گا کیوں کہ اپوزیشن چیف سیکرٹری اور آئی جی کو بلا کر انہیں بے عزت کرنا چاہتی ہے، ماڈل ٹاؤن کیس میں یہی کچھ ہوا تھا اب پولیس کا مورال ڈاؤن نہیں ہونے دینگے۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ پرویز الہی کو ہٹایا جائے گا اور 17 جولائی کو ضمنی الیکشن جیت کر مطلوبہ ایم پی ایز پورے کرکے اسپیکر کو گھر بھیج کر نیا اسپیکر لایا جائے گا

دوسری جانب اپوزیشن بھی آئی جی پنجاب اور چیف سیکرٹری پنجاب کو ایوان میں پیش کرنے اور معافی مانگنے کے مطالبے پر ڈٹی ہوئی ہے۔

واضع رہے کہ گزشتہ روز پنجاب اسمبلی ایڈوائزری کمیٹی میں مسلم لیگ ن کے ارکان نے اپوزیشن کو یقین دہانی کرائی تھی کہ چیف سیکرٹری اور آئی جی کو بریفنگ کے لیے بلایا جائے گا، لیکن پھر پولیس اور بیوروکریسی کا مورال ڈاؤن ہونے سے بچانے کے لئے حکومت نے آئی جی اور چیف سیکرٹری کو نہ بلانے کا فیصلہ کیا۔