news-details

ملک بھر میں سیلاب کی تباہ کاریاں:مزید 18 افراد لقمہ اجل، متاثرین بے یارومددگار، کھلے آسمان تلے زندگی گزارنے پر مجبور

اسلام آباد : (بدهه : 07 ستمبر 2022) ملک بھر میں سیلاب کی تباہ کاریوں کے باعث 24 گھنٹے میں مزید 18 افراد زندگی کی بازی ہار گئے، جاں بحق افراد کی تعداد ایک ہزار 343 ہوگئی، 5 لاکھ 60 ہزار 789 گھر مکمل تباہ ہوچکے ہیں، 6 ہزار 579 کلومیٹر سڑکوں کو شدید نقصان پہنچا ہے۔ نيشنل ڈيزاسٹر مينجمنٹ اتھارٹى کى تازہ رپورٹ کے مطابق سیلاب سے گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک بھر میں مزید اٹھارہ افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے جس کے بعد جاں بحق ہونے والوں کی مجموعی تعداد 1343 ہوگئی ہے جبکہ زخمیوں کی تعداد ساڑھے 12 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے۔
رپورٹ کے مطابق سیلاب اور بارشوں سے مجموعی طور پر سب سے زيادہ 535 اموات سندھ میں ريکارڈ کی گئیں، بلوچستان میں 260 ،خيبرپختونخوا میں 290 ،پنجاب میں 191 ، گلگت بلتستان میں 22 جبکہ آزاد کشمیر میں 43 افراد زندگى کى بازى ہار گئے۔ جاں بحق ہونے والوں میں 591 مرد 269 خواتين اور 474 بچے شامل ہیں۔ این ڈی ایم اے رپورٹ میں مزید بتایا گیا کہ سیلاب سے سندھ میں سب سے زیادہ 8321 افراد زخمى بھی ہوئے، پنجاب میں 3858 ،بلوچستان میں 164 ،خيبر پختونخوا میں 351 جبکہ آزاد کشمير میں 21 افراد زخمى ہوئے، ملک بهر میں 11 لاکھ 32 ہزار 572 گھروں کو جزوى نقصان پہنچا جبکہ 5 لاکھ 60 ہزار 789 گھر مکمل تباہ ہو گئے۔246 پل اور 6579 کلومیٹر سڑکیں بھی متاثر ہوئیں۔ملک بھر میں 7 لاکھ 51 ہزار سے زائد مويشی بھی سیلابی ریلوں میں بہہ گئے۔
سیلاب سے متاثرہ افراد بے آسرا اور بے یارومددگار کھلے آسمان تلے زندگی گزارنے پر مجبور ہیں، سیلابی ریلوں کے متاثرین اپنا سب کچھ لٹانے کے بعد بے سرو سامانی کے عالم میں سڑکوں پر راتیں گزارتے ہوتے مدد کیلئے کسی مسیحا کے منتظر ہیں۔