صدر عارف علوی نے پارلیمنٹ کا مشترکا اجلاس چھ اکتوبر کو طلب کر لیا

news-details

اسلام آباد : (منگل: 04 اکتوبر2022ء) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے پارلیمنٹ کا مشترکا اجلاس چھ اکتوبر کو طلب کر لیا ہے۔ مشترکہ اجلاس سے صدر مملکت خطاب کرینگے۔ آئین کے آرٹیکل چؤن ایک اور چھپن تین کے تحت چھ اکتوبر کو طلب کیے گئے اجلاس میں صدارتی خطاب کی روایت پوری کی جائے گی۔ صدر مملکت اپنے خطاب میں آئینی اور قانونی امور پر بات کرتے ہوئے حکومت کو روڈ میپ دیں گے۔
اپنے خطاب میں صدر عارف علوی معیشت، جمہوریت اور انسانی حقوق پر بھی روشنی ڈالیں گے۔ اس سے قبل یہ اطلاعات سامنے آئی تھیں کہ اسپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف نے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کا پارلیمنٹ سے لازمی خطاب مسلسل تعطل کا شکار ہونے کے باوجود 22 ستمبر کو ہونے والا مشترکا اجلاس تیسری بار مزید ایک ماہ کے لیے ملتوی کیا تھا۔
پارلیمنٹ کا آخری مشترکہ اجلاس 9 جون کو ہوا تھا جس میں حکومت نے متنازع انتخابی اصلاحات اور احتسابی قوانین کامیابی سے منظور کروائے تھے جنہیں اس سے قبل صدر عارف علوی نے قومی اسمبلی اور سینیٹ سے منظوری کے باوجود منظوری دینے سے انکار کر دیا تھا۔
25 جولائی 2018 کے عام انتخابات کے نتیجے میں وجود میں آنے والی موجودہ قومی اسمبلی اپنی 4 سالہ مدت پوری کر کے اپنے آخری پارلیمانی سال میں داخل ہو چکی ہے اور صدر کا پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب لازمی ہے جو 14 اگست کو قومی اسمبلی کا آخری پارلیمانی سال شروع ہونے کے ساتھ ہی لازم ہو چکا ہے اور تاحال تعطل کا شکار رہا۔
پی ٹی آئی کے اقتدار سنبھالنے کے بعد ڈاکٹر عارف علوی ستمبر 2018 سے اب تک بطور صدر 4 بار پارلیمنٹ سے خطاب کر چکے ہیں۔ گزشتہ سال 13 ستمبر کو ڈاکٹر عارف علوی نے اس وقت کی اپوزیشن جماعتوں کے شدید احتجاج کے دوران پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں کے مشترکا اجلاس سے خطاب کیا تھا۔