news-details

توہین الیکشن کمیشن کیس:عمران خان اور دیگر پی ٹی آئی رہنماؤں کو نوٹس جاری

اسلام آباد: (منگل: 15 نومبر2022ء) سپریم کورٹ نے توہین الیکشن کمیشن کے کیس میں عمران خان اور دیگر پی ٹی آئی رہنماؤں کو نوٹس جاری کردئیے۔
سپریم کورٹ میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے توہین الیکشن کمیشن کے کیس میں ادارے کی درخواست پر سماعت کی جس دوران عدالت نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے مختلف ہائیکورٹس میں زیر التوا کیسز کسی ایک ہائیکورٹ میں منتقل کرنے کی درخواست کی ہے، الیکشن کمیشن کا مؤقف ہے کہ بلدیاتی اور عام انتخابات کی تیاری کریں یا کیسز لڑیں۔
عدالت نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان نے سپریم کورٹ کے حکم سے کیسزیکجا کرنے کی عدالتی نظائربھی پیش کیں۔ بعد ازاں سپریم کورٹ نے الیکشن کمیشن کی درخواست پرعمران خان، فواد چودھری اور اسد عمر کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت 15 دن تک ملتوی کر دی۔
سپریم کورٹ کے چیف جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا کہ الیکشن کمیشن آرٹیکل 186 اے پر انحصار کر رہا ہے۔کیا سپریم کورٹ کے مختلف ہائیکورٹس کے کیسز یکجا کرنے کے فیصلے کی مثال موجود ہے؟ الیکشن کمیشن کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ سپریم کورٹ نے 1999 میں مختلف ہائیکورٹس میں زیر التوا انکم ٹیکس کیسز یکجا کرنے کا حکم دیا تھا۔
چیف جسٹس نے کہا کہ مختلف ہائیکورٹس میں زیر التوا کیسز یکجا کرنے سب میں قانونی نکتا ایک ہونا ضروری ہے۔ عدالت نے استفسار کیا کہ ہائیکورٹس میں توہین الیکشن کمیشن کیسز میں درخواست گزار کون ہیں جس پر الیکشن کمیشن کے وکیل نے بتایا کہ ہائیکورٹس میں الیکشن کمیشن کے خلاف عمران خان، فواد چوہدری اور اسد عمر نے کیسز کر رکھے ہیں۔