سرد موسم میں سیاسی گرما گرمی:نواز شریف کی 15 سال بعد چوہدری شجاعت سے ملاقات، الیکشن اتحاد پر بات چیت

news-details

لاہور : (بدھ:  06 دسمبر2023ء) قائد مسلم لیگ ن میاں نواز شریف نے سربراہ ق لیگ چودھری شجاعت حسین سے 15 سال بعد ملاقات کی ہے ۔ قائد مسلم لیگ ن نواز شریف تقریباً 15سال بعد چودھری شجاعت حسین سے ملاقات کیلئے ان کی رہائش گاہ ظہور الٰہی روڈ پہنچے جہاں دونوں رہنماؤں کے درمیان ملاقات 40 منٹ تک جاری رہی۔

نوازشریف  کے ہمراہ شہباز شریف ، مریم نواز ، رانا ثناء اللہ ، سعد رفیق ، سردار ایاز صادق اور اعظم نذیر تارڑسمیت پارٹی کے دیگر رہنما بھی ملاقات میں شریک ہوئے۔نواز شریف اور لیگی قیادت کی آمد پر مسلم لیگ ق کے رہنماؤں نے ان کا استقبال کیا،  ملاقات میں مسلم لیگ ق کی جانب سے سالک حسین، شافع حسین، طارق بشیر چیمہ اور امتیاز رانجھا بھی شریک ہوئے ۔

نواز شریف نے مسلم لیگ ق کے سربراہ  شجاعت حسین کی خیریت دریافت کی ، چودھری شجاعت حسین نے نواز شریف کے لئے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔مسلم لیگ ن اور مسلم لیگ ق کی قیادت کی آئندہ عام انتخابات میں باہمی تعاون پر بات چیت ہوئی ۔ مسلم لیگ ق نے ملاقات کے بعد اپنی پارٹی قیادت کا اجلاس بلانے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ مسلم لیگ ق کی قیادت لیگی قیادت سے ملاقات بارے اپنے رہنماؤں کو اعتماد میں لے گی۔

ذرائع کے مطابق امید ظاہر کی جارہی ہےکہ دونوں جماعتوں کی ایک کمیٹی بنائی جائے گی جو الیکشن میں الحاق پر مذاکرات کرے گی۔ چوہدری شجاعت نے کہا ہےکہ جن سیٹوں سے ہمارے لوگ جیتے تھے نہ صرف وہ ہمیں دی جائیں  اس کے علاوہ بھی گجرات، سیالکوٹ، منڈی بہاؤ الدین اور حافظ آباد میں سیٹیں دی جائیں تاکہ اپنے زیادہ سے زیادہ امیدوار کھڑے کرسکیں۔

ذرائع نے بتایا کہ (ق) لیگ کی جانب سے یہ بھی کہا گیا ہےکہ جن سیٹوں سے (ن) لیگ کے لوگ جیتے تھے اس کے نیچے صوبائی اسمبلی کی سیٹیں انہیں دی جائیں، (ق) لیگ نے بہاولپور سے طارق بشیر چیمہ کی نشست بھی مانگی ہے اور اس کے نیچے 2 ممبران صوبائی اسمبلی کی نشستوں پر امیدوار بھی طارق بشیر کی مرضی کے ہوں گے۔ نواز شریف اور چوہدری شجاعت کے درمیان ملاقات کے بعد (ن) لیگ کا وفد میڈیا سے گفتگو کیے بغیر روانہ ہوگیا جب کہ (ق) لیگ کی جانب سے بھی میڈیا سے کسی نے بات نہیں کی۔