سيبس یونیورسٹی جامشورو نے لیڈی ٹیچر اور گرلز ہاسٹل وارڈن کو ہراساں کرنے کے الزام میں ڈپٹی ڈائریکٹر فنانس آصف علی شر کو ملازمت سے ہٹا دیا

news-details

جامشورو: (جمعہ: 19 اپریل 2024ء) وائس چانسلر شہید اللہ بخش سومرو (سيبس) یونیورسٹی آف آرٹ، ڈیزائن اینڈ ہیریٹیج جامشورو پروفیسر ڈاکٹر ارابیلا بھٹو نے لیڈی ٹیچر اور گرلز ہاسٹل وارڈن کو ہراساں کرنے کے الزام میں ڈپٹی ڈائریکٹر فنانس آصف علی شر کو ملازمت سے ہٹا دیا ہے۔ وومين ہراسمينٹ کمیٹی سيبس یونیورسٹی جامشورو کی سفارش پر وائس چانسلر نے ورک پلیس پر خواتین کو ہراساں کرنے کے خلاف تحفظ ایکٹ 2010 کے سیکشن (b) (4) (ii) کے تحت آصف علی شر کو کمیٹی کی رپورٹ کی  بنياد پر ملازمت سے ہٹا دیا۔

ویمن ہراسمنٹ کمیٹی سيبس یونیورسٹی جامشورو اور گرلز ریسکیو سنٹر جامشورو نے ڈپٹی ڈائریکٹر فنانس آصف علی شر کے خلاف فیکلٹی ميمبر اور وارڈن گرلز ہاسٹل کی شکایت پر الگ الگ تحقیقات کیں۔ گرلز ریسکیو سنٹر جامشورو نے 15 اپریل 2024 کو سيبس یونیورسٹی اور دیگر متعلقہ شعبہ جات کو اپنی رپورٹ پیش کی جبکہ ویمن ہراسمنٹ کمیٹی سيبس یونیورسٹی نے 17 اپریل 2024 کو وائس چانسلر کو رپورٹ جمع کی۔ دونوں کمیٹیوں کی سفارش پر آصف علی شر کو ملازمت سے ہٹانے کے احکامات جاری کئے۔ اس معاملے کو سنڈیکیٹ کے آئندہ اجلاس میں رپورٹ کیا جائے گا۔ یونیورسٹی کی جانب سے کیے گئے فیصلے کی معلومات سیکریٹری یونیورسٹیز اینڈ بورڈز، حکومت سندھ، ڈائریکٹوریٹ آف ہیومن رائٹس، حکومت سندھ، چیئرمین ہائر ایجوکیشن کمیشن اسلام آباد، چیئرمین ہائر ایجوکیشن کمیشن سندھ، کراچی اور ڈی ایس پی گرلز ریسکیو سینٹر کو بھیج دی گئی ہیں۔