حالیہ دورے کے بعد چین کے ساتھ تعلقات مزید بڑھے ہیں، ریاست کی بقا کیلئے باہر سے کوئی ضمانت نہیں لاسکتے:احسن اقبال

news-details

لاہور: (بدھ: 19 جون 2024ء) وفاقی وزیر منصوبہ بندی احسن اقبال نے کہا ہے کہ ریاست کی بقا کے لیے باہر سے کوئی ضمانت نہیں لاسکتے۔ لاہور میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان اور چین کے تعلقات پرٹرولنگ شروع کردی گئی ہے، مخالفین کو دباؤمیں لانے کے لئے ٹرولنگ شروع کی جاتی ہے، تاثر دینے کی کوشش کی جارہی ہے کہ پاکستان اور چین کے تعلقات میں کمی آگئی ہے۔

احسن اقبال نے کہا کہ پہلی دفعہ اسپیس کے شعبے میں پاکستان اور چین کے تعلقات آگے لے جارہے ہیں، چین کے اشتراک سے اسپیس پروگرام کو آگے بڑھائیں گے، چین نے کہا ہے وہ اپ گریڈیڈ لیول پر سی پیک کو آگے بڑھانے کے لیے تیار ہے، چین سے روابط کو اسپیس کے شعبے میں بھی وسعت دی گئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ مشترکہ بیان سننے کے بعد کوئی احمق ہی ہوگا جو کہے تعلق کم ہورہا ہے، حالیہ دورے کے بعد چین کے ساتھ تعلقات مزید بڑھے ہیں، چینی صدر نے کہا ہم اسٹریٹجک تعلقات کو مزید گہرا کرنا چاہتے ہیں۔ وفاقی وزیر منصوبہ بندی نے کہا کہ حکومت اور اپوزیشن میں رہے کبھی ریاستی اداروں کو تنقید کا نشانہ نہیں بنایا، اگر ریاستی اداروں کو کمزور کریں گے تو اس کی بقا کے لیے باہر سے کوئی ضمانت نہیں لاسکتے، تنقیدکرنے والوں کو ٹرولنگ کے ذریعے ہراساں کیاجاتا ہے، اس کو میں ٹرول گردی کہوں گا۔

انہوں نے کہا کہ ایک سیاسی جماعت چند روز سے پاک چین تعلقات پر پروپیگنڈا کررہی ہے، یہ کہنا دشمن کا پروپیگنڈا ہے کہ چین نے تعلقات کو ڈاؤن گریڈ کردیا، ریاست کے مفادات کے ساتھ کھلیں گے توآہنی ہاتھوں سے نمٹنا جائے گا۔ احسن اقبال نے کہا کہ آپس کے اختلافات ہوسکتے ہیں،اس کامطلب یہ نہیں کہ ریاست کے مفاد کے ساتھ کھیلیں۔